Thursday, January 18, 2018

Wednesday, January 17, 2018

Breaking News: Zainab Ka Qatil Umar Giriftaar (Zainab Ka Qatil Pakra gia)



آخر کار معصوم زینب کا قتل پکڑا گیا سی سی ٹی وی فوٹیج کے مطابق معصوم زینب کے گھر کے قریب اسے اشارہ کر کے اپنی جانب بلانے والا شخص ڈی پی او آفس میں پیش ہو گیا ہے اور اپنی شناخت کرواتے ہوئے کہا ہے کہ وہ اس معاملے میں بالکل بھی ملوث نہیں ہے۔

Tuesday, January 16, 2018

گھر کی بیسمنٹ میں پڑی کئی سال پرانی چیز، نیلامی میں بیچنے گیا تو 12 کروڑ روپے قیمت لگ گئی، بظاہر بیکار سی نظر آنے والی یہ کیا قیمتی ترین چیز تھی؟ جان کر آپ اس خاندان کی قسمت پر دنگ رہ جائیں گے

نیویارک(نیوز ڈیسک)اگر آپ کوئی بے کار سی چیز چند سو روپے میں بیچنے کی کوشش کریں اور وہ 12لاکھ روپے میں بک جائے تو یقینا دیوانہ کر دینے والی خوشی محسوس ہو گی۔ اگرچہ خوش قسمتی کا ایسا واقعہ خواب و خیال کی بات لگتا ہے لیکن ایک امریکی خاندان کا مقدر دیکھئے کہ سچ میں ان کے ساتھ ایسا ہی ہوا ہے۔ 
میل آن لائن کے مطابق ریاست نیو جرسی سے تعلق رکھنے والے اس خاندان کے گھر کے تہہ خانے میں ایک قدیم پینٹنگ پڑی تھی دادا پردادا کے وقتوں سے پڑی تھی جس کی جانب کبھی کسی کی توجہ نہیں گئی تھی۔ اس خاندان کے تین بیٹے نیڈ، راجر اور سٹیون کہتے ہیں کہ بچپن میں وہ تہہ خانے میں جاتے تھے تو مٹی سے اٹی اس پینٹنگ پر کبھی نظر پڑ بھی جاتی تو اسے لائق توجہ نہیں سمجھتے تھے۔ جب ان کے والدین دنیا سے رخصت ہوگئے تو ایک دن تہہ خانے کی صفائی کرتے ہوئے انہوں نے اس پینٹنگ کو بھی نکال لیا اور سوچا کہ کباڑ کے سامان کے ساتھ اسے بھی بیچ دینا چاہیے۔ 
اس پینٹنگ میں کرسی پر بیہوش پڑی ایک خاتون اور اس کے قریب بیٹھے دو مرد نظر آتے ہیں جو اسے ہوش میں لانے کی کوشش کررہے ہیں۔ نیڈ کا کہنا تھا کہ وہ بچپن میں اس پینٹنگ کو دیکھ کر سوچا کرتے تھے کہ اس کی آخر ہمارے گھر میں کیا ضرورت تھی۔ انہوں نے یہ پینٹنگ اور کچھ پرانے برتنوں کو بیچنے کے لئے ایک کباڑیے سے رابطہ کیا جس کا کہنا تھا کہ ان چیزوں کو بیچ کر چند سو ڈالر کے قریب رقم حاصل ہوسکتی ہے۔ یہ سن کر تینوں بھائی خاصے مایوس ہوئے اور سوچا کہ پینٹنگ کو علیحدہ کردینا چاہیے کیونکہ شاید اس کی وجہ سے باقی چیزوں کی بھی ٹھیک قیمت نہیں لگ رہی تھی۔ اس کا پینٹ اکھڑ رہا تھا اور اس میں نظر آنے والے لوگ بھی زیادہ خوبصورت نہیں تھے۔ ان کا خیال تھا کہ یہ بہت ہی ناکارہ پینٹنگ ہے جو کہ دوسری چیزوں کی قیمت کو بھی متاثرکررہی تھی۔

ہائیکورٹ نے معذور افراد کے لئے گونگا،بہرا ، لنگڑا اوراندھاوغیرہ کے الفاظ استعمال کرنے پر پابندی لگا دی

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے معذور افراد کے لئے قانون میں سے گونگا،بہرا اور لنگڑا کے الفاظ حذف کرنے کاحکم دے دیاہے،عدالت نے ہدایت کی ہے کہ قانون میں معذور افراد کو خصوصی اہمیت کے حامل افراد قرار دیا جائے۔

چیف جسٹس سید منصور علی شاہ نے یہ حکم معذور افراد سے متعلق جاری آرڈیننس کی مذکورہ شقوں کو کالعدم قرار دینے کے لئے دائر درخواست پرفیصلہ سناتے ہوئے جاری کیا،عدالت نے فیصلے میں کہا ہے کہ ہر طرح کے معذورافراد کوسپیشل افراد کہا جائے اور 1981ءکے آرڈیننس سے گونگے ،بہر ے اور اندھے کے الفاظ حذف کئے جائیں،عدالت نے اپنے فیصلے میں کہا ہے کہ اندھے کے لئے بینائی سے محروم کا لفظ استعمال کیا جائے،درخواست گزار نے موقف اختیار کیا تھا کہ 1981ءکے آرڈیننس میں معذور افراد کے لئے گونگے ،بہرے اور اندھے کے الفاظ درج ہیں جن سے معذور افراد کی تضحیک ہوتی ہے ان الفاظ کو قانون سے حذف کرنے کا حکم دیا جائے۔

دپیکا پڈوکون ایسے کپڑے پہن کر گاڑی کے بونٹ پر بازار میں بیٹھ گئیں کہ دیکھنے والے دنگ رہ گئے ،سوشل میڈیا پر ہنگامہ سا برپا

ممبئی(ڈیلی پاکستان آن لائن )بھارتی اداکارہ دپیکا پڈوکون کو کسی تعارف کی ضرورت نہیں ہے وہ جہاں بھی جاتی ہیں ان کے مداحوں کا رش لگ جاتاہے اور ہر کوئی انہیں بس ایک جھلک دیکھنے کیلئے بے تاب نظر آ تاہے تاہم اب ان کی بازار میں پولیس جیب کے بونٹ پر ٹریفک پولیس کی وردی میں بیٹھے ہوئے کی تصویر وائرل ہو گئی ہے ۔
تفصیلات کے مطابق ٹریفک پولیس اہلکار کے روپ میں گاڑی پر بیٹھی آرام کرتی دپیکا پڈوکون کی تصویر نے سوشل میڈیا پر دھوم مچادی ہے، تصویر میں وہ ٹریفک پولیس اہلکار کی وردی پہنے آنکھوں پر کالا چشمہ لگائے پولیس جیپ پر بیٹھی آرام کرتی نظر آرہی ہیں۔لوگوں کا خیال ہے کہ یہ نیا روپ شاید دپیکا کی اگلی فلم کا ہے اور وہ اپنی آنے والی فلم میں ٹریفک پولیس اہلکارکا کردار ادا کریں گی تو یہ بالکل غلط ہے۔یہ تصاویر دراصل دپیکا پڈوکون کے نئے اشتہار کی ہیں تاہم ان کے پرستاروں کو دپیکا کا دبنگ پولیس اہلکار کا روپ بے حد پسند آرہا ہے۔

15سالہ لڑکی کا گینگ ریپ، اس کے بعد بھی درندوں کی ہوس نہ بجھی تو اس کے جسم میں ایسی چیز ڈال دی کہ شیطان بھی کانپ اُٹھے

نئی دلی(نیوز ڈیسک)بھارتی ریاست ہریانہ سے ایک ہفتہ قبل لاپتہ ہونے والی نوعمر دلت لڑکی کی لاش تو آخر کار مل گئی ہے لیکن اس حال میں کہ دیکھنے والوں پر لرزہ طاری ہو گیا۔ اس بدقسمت 15 سالہ لڑکی کے جسم پر 19 گہرے زخموں کے نشانات ہیں، جگر اور پھیپھڑوں سمیت اندرونی اعضاءبھی کٹے ہوئے ہیں۔ پوسٹمارٹم کرنے والے ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ کم از کم چار مختلف افراد نے اسے جنسی درندگی کا نشانہ بنایا ہے۔ اجتماعی عصمت دری اور شدید جسمانی تشدد سے بھی درندوں کا جی نا بھر اتو مزید حیوانیت کا مظاہرہ کرتے ہوئے اس کے جسم میں لکڑی کا ایک بڑا ٹکڑا داخل کر دیا۔ 
یہ بدقسمت لڑکی سکول سے واپسی پر لاپتہ ہوئی تھی اور اس کی لاش کرکشیترا شہر سے 100 میٹر کی دوری پر ایک نہر کے قریب برہنہ حالت میں ملی۔ اس کے سر سے لے کر پاﺅں تک جسم کا ہر حصہ زخموں سے لہو لہان تھا۔ پوسٹمارٹم رپورٹ کے مطابق لڑکی کے جسم کو لہولہان کرنے کے بعد اسے ڈبویا بھی گیا تھا۔ پولیس واقعے کی تفتیش کر رہی ہے لیکن تاحال درندہ صفت مجرموں کا کوئی سراغ نہیں مل سکا۔


جن لوگوں کی یہ انگلی ٹیڑھی ہوتی ہے وہ ہر ٹیڑھا کام سیدھا کرکے سب کو حیران کردیتے ہیں

لاہور(نظام الدولہ)ہاتھ کی چاروں انگلیوں کی ساخت اور رجحانات سے شخصیت کے مختلف پہلووں کا اندازہ و قیافہ لگایا جاسکتا ہے۔ان انگلیوں میں سے چھوٹی انگلی کافی دلچسپ ہے۔اس سے کسی بھی انسان کی ہنر مندی،بول چال،تقریر اور خوش گفتاری کا اندازہ کیا جاسکتا ہے۔ایک ایسا انسان جو ٹیڑھے کاموں کو سیدھا کرنے کا ہنر جانتا ہو،جھوٹ و سچائی کے ملغوبہ سے ڈرامائی صورتحال پیدا کرنے میں بھی کمال کا ہنر دکھاتے ہیں۔ایسے افراد کی چھوٹی انگلی کی اوپر والی پور تیسری انگلی کی جانب جھکتی ہے ،یہ جتنی جھکے گی اتنا ہی اس انسان کے مزاج میں ڈرامائی تبدیلی اور حساسیت پیدا ہوگی۔وہ غیر قانونی کام کرنے میں ماہر ہوگا لیکن اس کا انحصار اس بات پر ہے کہ ایسا بندہ کس پوزیشن میں ہے۔

ٹیڑھی انگلی والے ایک شخص کا واقعہ سن لیجئے۔ برسوں پہلے کی بات ہے،ایک سرکاری یونیورسٹی میں امتحانوں کی نقل کرانے اور امیدواروں کو پاس کرانے والے ایک آدمی سے میری ملاقات ہوئی ۔اس کی چھوٹی انگلی غیر معمولی طور پر جھکی ہوئی تھی ۔میں نے جب اس سے پوچھا کہ کیا وہ خودکشی کا سوچتا ہے؟ وہ کھکھلا کر ہنسا کہ ہر گز نہیں ۔کیونکہ اسکے پاس پیسہ وافر تھا اور ہر وہ خوشحال زندگی سے انجوائے کررہا تھا ۔اس ملاقات کے چند سال بعد ایک دوست کی وساطت معلوم ہوا کہ اس نے خود کشی کرلی تھی۔وہ اس بات پر حیران تھا کہ بظاہر اسے کوئی مسئلہ نہیں تھا پھر بھی اس نے خودکشی کرلی تھی۔

Google+ Badge

Contact Form

Name

Email *

Message *

Popular Posts